اسم ام موسیٰؑ

اسم ام موسیٰؑ Rooh ul Amin: Monthly Spiritual Magazine hazrat moosa real mother name, musa mother quran, prophet musa's mother, hazrat musa son name, hazrat musa ki mother ka name, hazrat musa sister name, hazrat musa family tree, prophet musa mother name in urdu, ism e umme moos as, اسم ام موسیٰؑ hazrat moosa real mother name, musa mother quran, prophet musa's mother, hazrat musa son name, hazrat musa ki mother ka name, hazrat musa sister name, hazrat musa family tree, prophet musa mother name in urdu, ism e umme moos as, اسم ام موسیٰؑ

تمام قارئین کو میری طرف سے سلام عرض ہے ایک لمبی غیر حاضری کے بعد دوبارہ جناب مزمل صاحب کی فرمائش پر قلم اٹھایا ہے۔ غیر حاضری کی وجہ طویل علالت اور دوران علالت بھی شدید مصروفیات ہیں خیر میرے کافی مضامین آپ حضرات پڑھ چکے ہیں۔ میں نے ایسے ایسے مضامین جو نہایت اہم اور حساس موضوعات پر مشتمل تھے بھی، شائع کروانے سے دریغ نہیں کیا اس کی وجہ صرف شاید یہی ہے کہ مجھے تشہیر علم کا شوق شاید کچھ زیادہ ہی ہے اس لئے روحانیت کے چہرہ سے پردہ اٹھانے میں میں زیادہ مشکل محسوس نہیں کرتا ۔ بھلا علم کو چھپا کر کہاں لے جانا ہے دنیا کا علم ہے دنیا میں ہی رہ جانا ہے۔ آج ایک بار پھر ایک انتہائی حساس فقیرانہ موضوع پر قلم اٹھایا ہے ۔ اسم ام موسیٰؑ کا موضع انتہائی عطائی ہے جو کہ اللہ پاک خاص ریاضات کے بعد ہی انسان کو ودیعت کرتا ہے ۔ اسم ام موسیٰؑ تمام دنیا کیلئے ایک لاینحل معمہ ہے ۔ تمام دنیا اس اسم کے پیچھے پڑی ہے لیکن کسی کو نہیں معلوم کہ یہ اسم کیا ہے اور تو اور بڑے بڑے جفار اور آثار کا دعویٰ کرنے والے بھی ا س راز کو بے نقاب کرنے سے قاصر نظر آتے ہیں۔

محترم علامہ شادگیلانی مرحوم نے بھی اس سلسلے میں بڑی کاوشیں کی تھیں مگر سب کی سب بے سود ۔ میری سمجھ میں یہ بات نہیں آتی ہے کہ آپ بڑے بڑے سوالات مثلاً قیامت کب آئے گی اگلا صدر نواز شریف ہوگا مریخ پر پانی کے آثار ہیں یا نہیں خروج دجال کب ہوگا وغیرہ وغیرہ تو حل کر لیتے ہیں مگر ان معاملات میں آپ کی طرز فکر گھاس چرنے کیلئے کیوں چلی جاتی ہے ۔ میں آپ کو طریقہ بتاتا ہوں آپ لکھیں۔

’’یا علیم! اصل اسم ام موسیٰؑ کیا ہے‘‘

اب اس سوال کو حل کریں روایتی ہیرپھیر، ترفع، نظیرہ، دست و چپ و راست، ہم مرتبہ اور ناطق لے لیں ۔ امید ہے آپ حضرات کو جواب مل جائے گا یا شاید یا علیم کو آپ پر اس قدر رحم آجائے کہ وہ خود جواب آپ کے کانوں میں بتا دیں۔ اگر اس آثار و اخبار سے آپ کو جواب مل جائے تو ہم کو بھی جفر سکھا دیں ہم اس بات سے بالاتر ہو کر کہ ہم کون ہے آپ سے علم جفر سیکھیں گے۔

لیکن اگر آپ اس کوشش میں ناکام رہے تو امید ہے کہ آپ اپنی غلطیوں کو دوبارہ دہرانے کی کوشش نہیں کریں گے اور توبہ استغفار کریں گے اور پھر ہم سے رجوع کیجئے گا ہم آپ کو حقائق سے آگاہ کرنے کی کوشش کریں گے۔

بہر حال آپ اپنے آپ کو گردشوں کے چکر سے نکلیں یا نہ نکالیں لیکن ہم آپ کو اس مضمون میں چند حقائق سے آگاہ کئے دیتے ہیں۔

اگرچہ اسم ام موسیٰ کا عنوان خالصتاً فقیرانہ ہے اور اس کی معلومات کو عام کرنا درست نہیں لیکن ہم یہ کوشش کریں گے کہ عام فہم لحاظ سے آپ کو یہ اسم بتا دیا جائے ۔ آپ یقین کریں کہ اس عنوان کے بارے میں آپ حضرات کو کوئی مصدقہ تصنیف نہیں ملے گی ۔ لوگ اس راہ کے بے نشان راہی ہیں نہ سرکا پتہ ہے نہ پیر کا اور چلے اسم ام موسیٰؑ دریافت کرنے۔

اس موقع پر یہ فقیر عرض کرتا چلے کہ یہ ایک بہت مشکل منزل ہے خود فقیر اس پر چل چکا ہے۔ عرصہ دو سال پہلے تک فقیر کے پاس حضرت موسیٰؑ کی والدہ کے ایک سو چوالیس مختلف نام موجود تھے پر ان میں سے ایک نام بھی درست نہ تھا۔ فقیر کا تعلق حضرت حکیم الامت مولانا اشرف علی تھانوی سے بڑا قلبی ہے اور فقیر آپ کا امت پر بڑا احسان مانتا ہے۔ آپ کی تصانیف میں جو نام حضرت موسیٰ کی والدہ کا موجود ہے فقیر بڑے عرصہ تک اس کی حقیقت جاننے میں کوشاں رہا کیوں کہ اتنا بڑا ولی اللہ جب کوئی بات لکھتا ہے تو اس کی صداقت میں شک کرنا بھی بڑا مسئلہ ہے۔ بہر حال بعد تحقیق معلوم ہوا کہ وہ اسم بھی غلط ہے۔

اسم ام موسیٰ کے بارے میں مشہور ہے کہ جس کسی کے پاس یہ اسم ہو وہ ہر قسم کا تالا قفل کھول سکتا ہے لوگ سمجھتے ہیں کہ اس کے زریعے تالے کھو ل کر شاید دولت کمائی جاسکتی ہے۔ لیکن وہ لوگ جو ایسا سمجھتے ہیں سخت غلطی پر ہیں آپ ہی بتائیں کیا ایک ایسی چیز جو اللہ فقیر کو عنایت کرتا ہے وہ غلط کام کے لیے کس طرح استعمال کی جاسکتی ہے میں آپ کو اس بات کی حقیقت بتاتا ہوں ۔

حامل اسم ام موسیٰ کو اس بات پر بحکم خدا تعالیٰ قدرت حاصل ہوتی ہے کہ وہ ہر قسم کی بندش اور رکی ہو چیز کو جاری کر سکتا ہے۔ غور فرمائیے میرے اس فقرے کے اندر کی گہرائی کو جانیں اللہ آپ کا ادراک کھول دے۔ اس سے زیادہ بیان کرنا ہمارے بس سے باہر ہے۔